ایس او پیز پر عمل نا کرنے پر 5 مارکٹس بند کر دی گئیں

 مئی 14 2020: (جنرل رپورٹر) کراچی میں سماجی فاصلے اعر دیگر احتیاطی تدابیر کی دھجیاں اڑانے والی 6 مارکیٹس کو سیل کر دیا گیا ہے

ملک بھر میں لاک ڈاؤن کی نرمی کے بعد عوام کا سیلاب بازاروں اور مارکٹوں میں امنڈ آیا ہے جس کے باعث کورونا کیسز میں بھی اضافہ دیکھنے کو آیا ہے- حکومت کی جانب سے سخت ہدایات کے باوجود کسی قسم کی احتیاطی تدابیر پر عمل نہیں کیا جا رہا- عوام پر دوبارہ لاک ڈاؤن کرنے کا خوف بھی کچھ کام نہیں کر پا رہا ہے

کراچی سیل ہونے والی مارکٹس میں زینب مارکیٹ, مدینہ سٹی مال, وکٹوریہ مارکیٹ, انٹرنیشنل مارکیٹ, گل پلازہ اور ارحم شاپنگ سینٹر شامل ہیں جنہیں تالے لگا دئیے گئے ہیں- جن شہروں میں کورونا زیادہ ہے جیسے لاہور اور پشاور ان میں بھی شدید رش کے باعث ٹریفک جام رہی جبکہ پنجاب میں بچوں اور بزرگوں کے بازار آنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے

دوسری جانب گورنر سندھ نے ایک آرڈینینس منظور کیا ہے جس کے تحت کورونا سے بچاؤ کے حفاظتی اقدامات کی خلاف ورزی پر دس لاکھ جرمانہ ہو گا جبکہ اس آرڈینینس پر عملدرآمد فوری طور پر شروع کر دیا ہے

صوبائی حکومتوں کا کہنا ہے کہ یہ لاک ڈاؤن میں نرمی عوام کے فائدے کے لئے کی گئی ہے تاہم اگر احتیاطی تدابیر پر عمل نہیں کیا جاتا تو اس سے الٹا نقصان بھی ہو سکتا ہے

آل کراچی تاجر اتحاد کے چئیرمین عتیق عامر نے کہا ہے ایس او پیز کی خلاف ورزی پر دکانیں سیل کرنے کا فیصلہ درست ہے- دکانوں کو اونرز پر لازم ہے کہ ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں

پولیس زرائع کے مطابق جن مارکٹس اور پلازوں کو سیل کیا گیا انہوں نے ایس او پیز کی دھجیاں اڑا رکھی تھیں– اسسٹنٹ کمشنر گارڈن کے مطابق دکانداروں نے نا تو سیناٹائزرذ کا اہتمام کیا تھا اور نا ہی ماسک اور گلوز پہن رکھے تھے جس پر دکانوں کو بند کروا دیا گیا ہے

پنجاب بھر کے بازاروں میں آج سے بچوں اور بزرگوں کے نکلنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے

مزید برآں ٹائیگر فورس کے جوانوں کو ایس او پیز پر عمل درآمد کروانے کے لئے بازاروں سمیت مختلف مقامات پر تعینات کر دیا گیا ہے

وزیر صنعت پنجاب اسلم اقبال کہتے ہیں کہ ایس او پیز پر عمل نہیں ہوتا تو مارکٹس بند کر دیں

Pakis Daily

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *