پاکستان بھر میں سردی کی تباہی کے باعث 41 افراد ہلاک ہوگئے.

ملک بھر میں سردیوں کا شدید موسم جاری رہنے کے باعث کم و بیش 41 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

صوبائی ڈیزاسٹر منیجمنٹ کے سربراہ عمران زرکون کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 22 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں ، جس کی بنیادی وجہ بلوچستان میں شدید برف باری کے دوران چھتیں گرنے کی وجہ ہیں۔ شدید برف باری نے کئی شاہراہیں بند ہونے پر مجبور کردیا ، کچھ صوبوں میں چھ انچ برف سے نیچے برف باری ہوئی۔ ریاست جمہوریہ کی ایمرجنسی سروس کے عہدیداروں کے مطابق ، آزاد جموں و کشمیر (اے جے کے) میں صوبہ پنجاب میں تین افراد ہلاک ، شدید بارش سے دوچار اور 15 دیگر افراد ہلاک ہوگئے۔

جبکہ سکھر میں شدید بارش کے نتیجے میں ایک شخص اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھا۔

وزارت برائے ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے مطابق ، افغانستان میں سخت موسمی صورتحال کے نتیجے میں کم از کم 24 افراد کی موت واقع ہوئی ہے

پیر کے رات سخت موسم میں سینکڑوں مسافر سخت موسم میں سڑکوں پر پھنس گئے ، کیونکہ بلوچستان کے مختلف علاقوں میں شدید برفانی طوفان نے تباہی مچا دی۔

لیویز عہدیداروں نے بتایا کہ ضلع سیف اللہ کے علاقے کان مہتر زئی میں 500 سے زائد مسافر پھنسے ہوئے ہیں ، جہاں درجہ حرارت کم ہوکر درجہ حرارت -14 ڈگری سینٹی گریڈ ہوگیا جبکہ شدید برف باری اور تیز ہواؤں نے مرکزی قومی شاہراہ پر کاروں کو تقریبا دفن کردیا۔

ایم ای ٹی آفس نے آئندہ 24 گھنٹوں تک بلوچستان کے بیشتر علاقوں میں سرد اور خشک موسم کی پیش گوئی کی ہے۔
بلوچستان کے سات اضلاع میں ہنگامی صورتحال کا اعلان کیا گیا تھا ، جو شدید بارش اور برف باری کے باعث بری طرح متاثر ہوئے تھے۔
لواری ٹنل سمیت چترال ضلع کے کچھ حصوں میں 23 انچ برف باری ریکارڈ کی گئی۔

ادھر گلگت بلتستان میں شدید برف باری نے 50 سالہ ریکارڈ توڑ دیا ہے۔ شمالی علاقے میں پچھلے 36 گھنٹوں سے جاری بارش اور برف باری کے بعد ہنزہ اور نگر میں ہنگامی صورتحال کا اعلان کیا گیا ہے۔

لینڈ سلائیڈنگ کے خطرہ کی وجہ سے حکام نے لوگوں کو پہاڑی راستوں پر سفر کرنے سے گریز کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ برف باری نے گلگت بلتستان میں بجلی کی تقسیم کے نظام کو بھی بہت متاثر کیا ہے جو مقامی لوگوں کی مشکلات کو جوڑتے ہیں۔

دریں اثنا ، سرکاری ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران آزاد جموں وادی کی برف پوش نیلم میں برف باری کے دو الگ الگ واقعات میں دو خواتین سمیت پانچ افراد کو زندہ دفن اور تین دیگر زخمی ہوگئے۔

پاکسیدیلی سے متعلق مزید خبریں پڑھیں: https://www.pakisdaily.com/category/national/

Farukh Tariq

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *