علیم خان قومی اسمبلی کے 1.6 ارب روپے کے سب سے امیر ایم پی اے ہیں

انتخابی کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے جمعرات کو بتایا کہ پنجاب اسمبلی کے قانون ساز نے اثاثے کے ساتھ 1.61 ارب روپے کی مالیت کی.

تاہم، ای سی سی دستاویزات کے مطابق انہوں نے 710 ملین روپے سے زائد رقم کی رقم ادا کی ہے.

ای سی سی نے 2018-2019 کے لئے پنجاب اسمبلی کے ارکان کی مالی تفصیلات جاری کی ہے.

تحریک طالبان پاکستان کے امجد محمود بھی ایک ارب روپے ہیں جو 1.06 بلین روپے کے اثاثے کا مالک ہیں. انہوں نے 11 کاروں اور ایک موٹر سائیکل کا مالک بھی ہے اور کوٹ آدمی پاور پلانٹ، انکوک آئل ریفائنری اور سوئی شمالی گیس پائپ لائنز لمیٹڈ میں حصص بھی شامل ہے.

وزیر اعلی پنجاب عثمان بخیر کو 3 کروڑ روپے کی مالیت کا مالک ہے. بززد 25 لاکھ روپے کی مالیت کے مالک ہیں جبکہ وہ 2.4 ٹرانسفارمرز کے مالک ہیں، دو گاڑییں 3.8 ملین ڈالر اور 1.3 کروڑ روپے کی سونا ہے.

اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز نے اثاثے کی مالیت 180 ملین سے زائد ہے.

حزب اختلاف کے رہنما حمزه شہباز نے 410 ملین کے اثاثے کا مالک جبکہ پنجاب صوبائی وزیر میاں محمود راشد نے 190 ملین سے زائد اثاثے کی ہے.

پنجاب کے وزیر صحت یاسمین راشد نے 470 ملین سے زائد اثاثوں کا مالک جبکہ سابق صوبائی وزیر خزانہ فیاض چوہان کے پاس 1.5 ملین کی اثاثہ ہے.

مسلم لیگ (ن) خواجہ سلمان رفیق نے 156 ملین کی مالیت کا مالک جبکہ خواجا عمران نذیر نے 210 ملین سے زائد اثاثہ جات کی ہے. سردار آیس لیگاری نے 280 ملین سے زیادہ اثاثہ رکھتے ہوئے بلال یاسین کو 14 ملین سے زائد مالیت کے اثاثے حاصل کیے ہیں.

Farukh Tariq

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *