آرمی چیف آف آرمی عملے نے وزیراعظم سے ملاقات کی، علاقائی امن پر تبادلہ خیال

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجو نے پیر کو پیر کے روز وزیر اعظم عمران خان کو علاقائی امن کے لۓ آرمی کی کوششوں پر آگاہ کیا.

دونوں ممالک نے ملک بھر میں سیکورٹی کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا.

آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجو نے آج وزیر اعظم عمران خان کو PM آفس سے ملاقات کی. آرمی چیف نے سیکورٹی معاملات اور خطے میں پائیدار امن کے لۓ آرمی کی کوششوں پر وزیر اعظم سے گفتگو کی. “تحریک طالبان پاکستان کے سرکاری ٹویٹر اکاؤنٹ کے مطابق وزیر اعظم کی سرگرمیاں بھی شامل ہیں.

یہ اجلاس ہوا جب طالبان نے گزشتہ دو دنوں کے دوران کابل اور قندھار میں دوبارہ پیچھے حملے کئے. اس دوران طالبان کے نمائندے دوحہ میں امریکی حکام کے ساتھ مذاکرات کے سلسلے میں پاکستان کے لۓ سہولت عمل کے تحت ہیں. طالبان – امریکہ کے تازہ ترین (ساتویں) راؤنڈ کے آغاز میں توقع تھی کہ عسکریت پسند گروہ متنازعہ متفق ہوں گے کہ افغان نمائندوں کے ساتھ تنازعات کے سیاسی حل پر مذاکرات شروع کرنے کے لئے متفق ہوں گے، جو اس کا اتوارہویں سال میں ہے.

تاہم، حملوں نے دوحہ میں کامیابی کے امیدوں پر سرد پانی ڈالا.

طالبان کے دوہا پر مبنی سیاسی دفتر کے ترجمان نے ٹویٹ کیا کہ عسکریت پسند گروپ غیر ملکی فوجیوں کو نکالنے کے لۓ بین الاقوامی سطح پر ضمانت کا وقت طے کر کے صرف ایک بار افغان افغان عناصر کے ساتھ بات چیت شروع کرے گی، تاہم، غنی انتظامیہ حکومت کے طور پر مصروف نہیں رہیں گی. ٹویٹ نے انٹرا – افغان عمل کو شروع کرنے کے لئے باغیوں کے حالات کی سختی سے ظاہر کیا.

اس دوران افغان صدر اشرف غني نے ایک بیان کے ذریعے کہا کہ طالبان میں طالبان کے حملے سے پتہ چلتا ہے کہ وہ تشدد اور جنگ جاری رکھنا چاہتے ہیں.

دریں اثنا، وزیراعظم کے مشیروں میں سے ایک نے کہا کہ: “وزیر اعظم کے ہدایت کے مطابق، ہم نے 2017 اگست تک ٹرمھم سرحدی دور کو عملی طور پر کام کرنے کے لئے تیار کیا ہے. آج اس سلسلے میں انتظامات تمام حصص داروں کے اجلاس میں حتمی . ” یہ خیال ہے کہ مسٹر غنی کے دو روزہ دورہ پاکستان کے ممتاز نتائج میں سے ایک ہے جس میں انہوں نے تجارتی اور اقتصادی تعاون کو بہتر بنانے اور کنیکٹوٹی کو بہتر بنانے پر بہت زور دیا. آئی ایس ایس ایس میں ان کی عوامی باتوں میں، افغان صدر نے کہا تھا کہ کنٹینرز کی تخلیقی منفی اثرات مرتب ہو رہی ہیں.

Farukh Tariq

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *